سابق حکومت کی ناکام معاشی پالیسیوں کی سزا عوام کو نہ دی جائے، خورشید شاہ 74

سابق حکومت کی ناکام معاشی پالیسیوں کی سزا عوام کو نہ دی جائے، خورشید شاہ

سابق حکومت کی ناکام معاشی پالیسیوں کی سزا عوام کو نہ دی جائے، خورشید شاہ

سکھر: پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ نگران حکومت پیٹرولیم مصنوعات کی نگران حکومت کی جانب سے مٹی کے تیل کی قیمت میں 3 روپے 36 پیسے اضافہ کیا گیا جس کے بعد اب یہ 87.7 روپے فی لیٹر میں دستیاب ہے۔قیمتوں میں اضافہ فوری واپس لے اور سابق حکومت کی ناکام پالیسی کی سزا عوام کو نہ دی جائے۔

خورشید شاہ نے نگران حکومت کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر سخت ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ اس اقدام سے مہنگائی کا نیا طوفان آئے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ سابقہ حکومت کی مصنوعی معاشی ترقی کا بھانڈہ پھوٹ چکا ہے، سابقہ حکومت کی ناکام معاشی پالیسیوں کی سزا عوام کو نہ دی جائے۔

خورشید شاہ نے کہا کہ ہم پٹرول، ڈیزل اور مٹی کے تیل میں اضافہ مسترد کرتے ہیں، نگران حکومت کو گزشتہ حکومت کی ڈگر پر نہیں چلنا چاہیے اور فوری طور پر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ واپس لیا جائے

نگران حکومت کا عوام پر پیٹرول بم: پیٹرول 7 روپے 54 پیسے اور ڈیزل 14 روپے مہنگا
نگران حکومت کا عوام پر پیٹرول بم: پیٹرول 7 روپے 54 پیسے اور ڈیزل 14 روپے مہنگا

واضح رہے کہ گزشتہ روز نگران حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات قیمتوں میں اضافہ کیا تھا جس کے مطابق پیٹرول 7 روپے 54 پیسے اضافے کے بعد اس کی نئی قیمت ساڑھے 99 روپے ہوگئی جب کہ ڈیزل کی قیمت میں فی لیٹر 14 روپے اضافہ کیا گیا جس کے بعد اس کی نئی قیمت 119 روپے 31 پیسے ہوگئی۔

نگران حکومت کی جانب سے مٹی کے تیل کی قیمت میں 3 روپے 36 پیسے اضافہ کیا گیا جس کے بعد اب یہ 87.7 روپے فی لیٹر میں دستیاب ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں