اگر تحفظات حل نہ ہوئے تو الیکشن کا بائیکاٹ کرسکتے ہیں: فاروق ستار 77

اگر تحفظات حل نہ ہوئے تو الیکشن کا بائیکاٹ کرسکتے ہیں: فاروق ستار

اگر تحفظات حل نہ ہوئے تو الیکشن کا بائیکاٹ کرسکتے ہیں: فاروق ستار

کراچی: ایم کیوایم پاکستان کے رہنما ڈاکٹر فاروق ستار نےکہا ہے کہ الیکشن کمیشن نے حلقہ بندیوں پر احتجاج پرکان نہیں دھرا اور ایم کیوایم کے دفاتر ابھی تک واپس نہیں ملے اگر تحفظات حل نہ ہوئےتو ایم کیوایم الیکشن کے بائیکاٹ کااعلان کرسکتی ہے۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ ووٹر کی کامیابی ہے کہ ہمیں یہ نشان مل گیا، میرے ساتھی، دوست سب کا نشان پتنگ کا ہے، ہم کسی تعصب میں نہیں پڑنا چاہتے، عوام چاہتی ہے کہ رابطہ کمیٹی مل کر جلسہ کرے لیکن ایم کیوایم کا دوسرا گروپ الیکشن میں سنجیدگی نہیں لے رہا۔

انہوں نے کہا کہ ایم کیوایم کا مینڈیٹ لے کر کسی اور کو دیا جارہا ہے، ہمیں مائنس کیا نہیں جارہا بلکہ کردیا گیا ہے، الیکشن ہماری بقا کی ضمانت نہیں دے سکتا، جوزیادتیاں ہمارے ساتھ ہوئیں سب کے سامنے ہے۔

ایم کیوایم رہنما کاکہنا تھاکہ ہم الگ صوبے کا مطالبہ کرتے رہیں گے، 2 نہیں 100 سے زیادہ انتظامی یونٹ بننے کی ضرورت ہے، ہمیں الگ صوبے کی بات کرنے پر لعنتیں سننی پڑیں، ایم کیوایم کا ہرساتھی الگ صوبے کا خواہاں ہے، جب سب الگ صوبہ چاہتے ہیں تو پھر سب کو اپنے حقوق کے لیے لڑناہوگا۔

فاروق ستار نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے حلقہ بندیوں پر احتجاج پرکان نہیں دھرا، میرا حلقہ مکمل ختم کرکے ڈیفنس،کلفٹن، لیاری سے ملادیا گیا،،اولڈسٹی ایریا کے کئی علاقوں کوڈسٹرب کردیا گیا۔

ان کا کہنا تھاکہ مردم شماری درست نہیں ہوئی، ہمارے ساتھ الیکشن سے پہلے زیادتی ہورہی ہے، ایم کیوایم کے دفاتر ابھی تک واپس نہیں ملے، ایم کیوایم کے پاس جگہ نہیں ہے، تحفظات حل نہ ہوئےتو ایم کیوایم الیکشن کے بائیکاٹ کااعلان کرسکتی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں